مسجد اجابہ
 یا
 مسجد مباہلہ

===========================


یہ مدينة المنورة میں موجود '' مسجد اجابہ '' ہے جسکو '' مسجد مباہلہ '' بھی کہتے ہیں - اس مقام پر رسول الله صلی الله علیہ و آلہ وسلم نے ایک مرتبہ الله سبحان و تعالی سے تین دعایں مانگی :


١ - یا الله میری امّت کو قحط سے نہ مارنا
٢- یا الله میری امت کو سیلاب سے نہ مارنا
٣- یا الله میری امّت کو تفرقے سے تباہ نہ کرنا -

الله رب کریم نے آپ صلی الله علیہ و آلہ وسلم کی پہلی دو دعایں تو قبول فرمائیں لیکن تیسری دعا مصلحتا'' قبول نہ فرمائی- آج ہم دیکھیں تو واقعی امت مسلمہ کس قدر فرقوں میں بٹی ہے -

اسی مسجد کو مسجد مباہلہ کے نام سے بھی یاد کیا جاتا ھے کیونکھ اس مقام پر ایک مرتبه رسول الله صلی علیھ وسلم بمعہ اپنے گھرانے جیسمین سیدہ بی بی فاطمه الزھرہ رضی الله تعالی عنھا ، سیدنا امام حسن رضی الله تعالی عنھ اور سیدنا امام حسیں رضی الله تعالی عنھ بھی شامل تھے ، نجران کے یہودیوں کے ساتھہ مباہلہ کرنے پھنچے تھے مگر یہودی وعده کر کے مقابلے کے لیے نہیں پھنچے - اسی واقعہ لی نسبت سے اسے '' مسجد مباہلہ '' بھی کہتے ہہیں تا ھم اسکی نام کی تختی پر '' مسجد اجابہ ہی درج ھے ٠
یہ مسجد مسجد النبوی میں '' شا ہرہ ستین '' پر جنت البقیع کے قریب واقع ہے - موقع ہو تو زایرین اسے باآسانی دیکھ سکتے ھیں -


STONE OF MASJID AJABA


INNER VIEW OF MASJID AJABA

NEXT PAGE
PREVIOUS PAGE
 LIST PAGE