HOUSE OF HALIMA SADIA
PROPHET BROUGHT UP


.

یہ طائف سے ذرا پہلے بنو سعد کے علاقے میں وہ مقام ہے جہاں سیدہ حلیمہ سعدیہ رضی اللہ عنہا کا گاؤں تھا۔ انہوں نے حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی اس ہی مقام پر پرورش کی تھی ۔ جب بنو سعد نے اسلام قبول کیا تو سیدہ حلیمہ اپنی بیٹی کے ساتھ مدینہ پہنچ کر ایمان لائیں۔ حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنی رضاعی والدہ اور بہن کا بھرپور استقبال کیا اور اپنی چادر بچھا کر انہیں بٹھایا۔ بعد میں انہیں بہت سے تحائف دے کر رخصت کیا۔

طائف کے قریب شوحطہ نامی گاؤں میں اب بھی سیدہ حلیمہ سعدیہ رضی اللہ عنہا کا قبیلہ بنو سعد آباد ہے۔ یہ علاقہ الباحہ سے طائف آنے والی ٹورسٹ ہائی وے پر واقع ہے۔ اس کا فاصلہ الباحہ سے قریباً 170 اور طائف سے 70 کلومیٹر ہے۔

یہاں ایک پہاڑی پر بنو سعد کی قدیم مسجد تھی جس کے اب پتھر ہی باقی رہ گئے ہیں ۔ ۔ غالباً یہ وہ مسجد ہو گی جو بنو سعد کے اسلام قبول کرنے کے بعد تعمیر کی گئی ہو گی۔ مسجد کے ساتھ ہی سیدہ حلیمہ سعدیہ رضی اللہ عنہا کا گھر تھا جو کہ پتھروں کے دو چھوٹے چھوٹے کمروں پر مشتمل تھا۔ ایک کمرے میں سیدہ اپنے خاوند کے ساتھ رہتی ہوں گی اور دوسرا کمرہ بچوں کے لئے ہو گا۔ اب ان کمروں کے صرف پتھر ہی باقی رہ گئے ہیں

" ۔ یہ تصویر حلیمہ سعدیہ کے اس ھی مکان کے کھنڈرات کے ہے جہاں بی بی حلیمہ آپکو عرب کے رواج کے مطابق مکّہ سے دور پرورش کرنے لائیں تھیں- "

دو تین سال کی عمر میں سیدنا محمد بن عبداللہ صلی اللہ علیہ واٰلہ وسلم انہی پہاڑیوں پر دوڑا کرتے ہوں گے۔ یہیں آپ نے چھوٹی سی عمر میں بکریاں چرائیں۔

"اور اس ہی مقام پر ایک مرتبہ فرشتوں نے اس وقت زمین پر آ کر حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا سینہ مبارک چاک کیا جب آپ بچوں کے ساتھ کھیل رہے تھے - سب بچے ڈر کر بھگ گے لیکن فرشتوں نے اپکا قلب مبارک دھو کر اسکو علم ، حکمت اور نور سے بھر دیا تھا جسکو ہر مسلمان شق صدر کا واقعہ سے یاد کرتا ھی - یہ وہ ہی مبارک اور قیمتی مقام ھی
 


NEXT PAGE
PREVIOUS PAGE
LIST PAGE