غزوہ بنی قینقاع


غزوہ بنی قینقاع

یہودیوں کے اس گروہ نے جنگ بدر کے بعد رسول اللہ(ص) کے ساتھ اپنا معاہدہ توڑ دیا۔ آپ(ص) نے بنو قینقاع کو نصیحت کی اور فرمایا کہ جنگ بدر میں قریشکے انجام سے عبرت لیں لیکن وہ اپنی ریشہ دوانیوں سے باز نہ آئے اور ایک دن بازار میں ایک یہودی نے ایک مسلمان عورت کی حرمت شکنی کی اور ایک مسلمان مرد نے غضب ناک ہوکر اس شخص کو ہلاک کرڈالا۔ بنو قینقاع کے یہودیوں نے اس شخص کو قتل کیا اور ساتھ ہی مسلمانوں کے خلاف اعلان جنگ کیا اور اپنے قلعے کے اندر مورچہ بند ہوئے۔ رسول اللہ(ص) نے کا محاصرہ کیا اور کچھ دن بعد ان کو اجازت دی کہ جتنا مال و متاع وہ اپنے اونٹوں پر لاد لیں اور شہر چھوڑ کر چلے جائیں اور یوں انہیں نکال باہر کیا گیا۔



NEXT PAGE 
PREVIOUS PAGE
LIST PAGE