میں دیکھنے کے چیز ہوں، مجھے ضرور دیکھیں
============================


سوال

=====
اس تصویر کو غور سے دیکھیں اور بتایں:-

١- یہ کیا ہے ؟ یہاں دو بڑی اہم تاریخی چیزیں نظر آرہی ہیں جن میں سے ایک تو شاید اب ہم کبھی نہ دیکھ سکیں تاہم دوسری چیز دیکھ سکتے ہیں - دونون چیزوں کا نام بتایں - اور

٢- یہ بھی بتایں یہ مقام ایسا کیوں نظر آرہا ہے - اس کے ساتھ کیا ہوا کہ یہ ایسا ہو گیا ؟

===============================================
PLZ JAWAB NOTE KARAIN
=======================
اصل میں یہ کعبہ مشرفہ کے اندر زمین میں گڑی لکڑی کی قدیم بیم کی تصویر ہے - ذرا اس کی تفصیل دیکھیں :-

سن ١٠٤٠( 1040) ہجری یعنی آج سے چار سو دو برس قبل سلطان مراد
خان کے دور میں جب شدید بارشیوں کے پاعث جب کعبہ مشرفہ کی دیواروں کو شدید نقصان پنہچا تو کعبہ کی نئی دیواریں بنائی گیئں-
،
تب سے کعبہ کی تزئین و آرائش کا کوئی بھرپور کام نہیں ہوا تھا اور سن ١٩٩٦ ( 1996) عیسوی تک اس بات کو ٣٧٥ ( 375) سال گزر چکے تھے اور کعبہ کی از سرنو تزئین و آرائش نہ گزیر ہو گئی تھی -

اسکی بیرونی دیواروں کے ساتھ اندرونی حصہ بھی مرمت طلب تھا.-
باہر کی دیواروں میں اینٹوں کے درمیان مصالحہ اکھڑ گیا تھا.- اینٹوں کی رنگت ماند پڑ چکی تھی -اینٹوں کے درمیان جو خلا پیدا ہوگیا تھا- اسمیں سفید چونٹیاں تھیں - شاید انہون نے ہی یہ خلا بنایا ہو- واللہ اعالم -

لیکن ان چونٹیوں سے متعلق ایک تاریخی بات یہاں نوٹ کرتے چلیں تاکہ ہمیں یہ احساس رہے کہ شاید انکا یہاں رہنا الله کا حکم ہو - اس کا کوئی واضح ثبوت تو نہیں ہے لیکن ایک تاریخی واقعہ ان چونٹیوں کا ضرور کعبہ مشرفہ سے منسلک ہے - جب اہل مکّہ نے کعبہ کی دیوار پر ایک غیر منصفانہ مطالبہ لٹکایا کہ بنو ہاشم اور دیگرقبیلے کے ان لوگوں کا سوشل بائیکاٹ کیا جاے گا جو رسول الله صلی الله علیہ وسلم کا ساتھ دیں گے - اس موقع پر الله تعالی نے چونٹیوں کو حکم دیا کہ وہ دستاویز کو کھا جائیں - ان چوٹیوں نے تین سال کے عرصے میں اس کو چٹ کر ڈالا ما سوا اس جگہ کے جہاں الله کا نام لکھا
تھا -

اس کےعلاوہ کعبہ مشرفہ کے اندرونی حصے کے دیواریں ٹوٹ پھوٹ کا شکار تھیں اور لکڑی کی بیمین اور لکڑی کے پلر پر پھپھوند لگ چکی تھی -

یہ تصویر بھی ایک بیم کی ہے جو کعبہ کے اندر زمین میں گڑی تھی - اب کیوں کہ یہ جگہ دوبارہ برابر کر دی گیی ہے لہذا اپ شاید ہم اپنی زندگیوں میں کبھی اس جگہ کو نہ دیکھ سکیں گے تاہم یہ لکڑی تبدیل کردی گیی ہے اور اس تاریخی لکڑی کے کچھ حصے مکّہ کے میوزیم میں محفوظ ہیں جنھیں ہم دیکھ سکتے ہیں -

یہ سب تفصیل جاننے کے باوجود اگر آپ اھلا'' کی 66 وین پکچر گیلری نہیں دیکھیں گے تو بہت کچھ مس کر جائیں گے -- بہت نادر تصاویر ہیں جو آج تک پرنٹ یا الیکٹرونک میڈیا میں پیش نہیں کی گیں- آپ ضرور کلک کریں اس لنک کو
http://www.ahlanpk.org/pg66.html
=========================
=


LIST PAGE

NEXT PAGE

PREVIOUS PAGE