ALGHABA  (forest )
(WOOD OF FIRST EVER PULPIT IN MASJID ALNABVI OBTAINRD FROM HERE BY THE PERMISSION OF AL PROPHET MUHAMMAD SALLALLA HO ALIHI WASALAM )




مسجد النبوی کی تعمیر کے بعد سن آٹھہ ہجری تک الله کے رسول صلی الله علیہ وسلم مسجد النبوی میں موجود کھجور کے ایک درخت کے تنے سے سہارہ لیکر خطبہ ارشاد فرماتے رہے لیکن مسلمانوں کی تعداد میں بےپناہ اضافہ ہونے کی وجھہ سے اب یہ مشکل ہونے لگا تھا کہ مسجد نبوی میں دوران خطبہ تمام اصحابہ اکرم آسانی سے رسول الله صلی الله علیہ وسلم کی زیارت کرسکیں اور احسن طریقے سے خطبہ سن سکیں - اس لیے صحابہ اکرم نے رسول الله صلی الله علیہ وسلم اجازت چاہی کہ کوئی ممبر بنوا کر مسجد نبوی میں رہ دیا جائے تاکہ آپ صلی الله علیہ وسلم اس پر کھڑے ہوکر خطبہ ارشاد فرمائیں تہ لوگ آپ کی آسانی سے زیارت بھی کر سکیں اور آپکی آواز مبارک بھی مسجد میں دور تک جا سکے -

رسول الله صلی الله علیہ وسلم نے جب اسکی اجازت دی تو سب سے پہلے مسجد نبوی میں تین اسٹیپ والا ایک ممبر بنا کر رکھا گیا اور یوں یہ ممبر اسلامی تاریخ کا پہلا ممبر ہونے کا کازوال اعزاز حاصل کر گیا. آج کل ہماری مساجد میں بھی اس ہی منمبر کی سنت پوری کرتے ہوتے تین اسٹیپ کے ممبر بناے جاتے ہیں -

رسول الله صلی الله علیہ وسلم کے لیے اسلامی تاریخ کا جو یہ پہلا لکڑی کا ممبر بنایا گیا تھا ، اسکی لکڑی '' الغابہ'' کے جنگل سے لی گئی تھی جس کی تصویر آج کے اھلا'' کے کویز میں اوپر دی گئی ہے - 

یہ ''الغابہ'' کے جنگل کی تصویر ہے جو اب '' الغابہ وائیلڈ پارک'' کے نام سے مشھور ہے - اور اس جنگل کو یہ اعزاز حاصل ہوا کہ اسکے کسی درخت کی لکڑی سے رسول الله صلی الله علیہ وسلم کے لیے اسلامی تاریخ کا پہلا ممبر تعمیر ہوا - جس لکڑی سے یہ تاریخ ساز متبرک ممبر تعمیر ہوا اس لکڑی کا نام '' تمارسک '' ہے - اب کبھی آپ مدینہ منورہ بلے جائیں تو اس پارک کی بھی زیارت کر لیں -
رسول الله صلی الله علیہ وسلم سے نسبت نے اس مقام کو متبرک اور تاریخی بنا دیا ہے
NEXT PAGE
PREVIOUS PAGE
LIST PAGE