غار سجدہ
=================





یہ غار جبل سلع پر واقع ہے اور اس غار کو '' غار سجدہ '' کہتے ہیں - جبل سلع دراصل وہ پہاڑی ہے جسکے دامن میں ''میدان خندق '' موجود ہے - یعنی گویا یہ پہاڑی اس میدان سے متصل ہے جہاں '' جنگ خندق'' کا معرکہ ہوا تھا اور تاریخی خندق کھودی گئی تھی -

آج کل اس میدان کو ''سبعہ مساجد '' یعنی سات مسجدوں والی جگہ کہا جاتا ہے - پہلے یہاں ان مقامات پر سات چھوٹی چھوٹی مساجد بنی تھیں جہاں '' جنگ خندق '' کے موقع پر جید صحابہ اکرم نے اپنے مورچے یا خیمے نصب کے تھے لیکن اپ یہاں صرف چار مساجد رہ گئی ہیں جن میں '' مسجد فتح '' مسجد سلمان فارسی '' مسجد علی اور '' مسجد فاطمہ '' باقی ہیں اور پورے جنگ کے میدان میں ایک خوبصورت جدید جامع مسجد بنا دی گئی ہے - 

آج جو زائر مدینہ منورہ آتا ہے ، اس میدان خندق کی ضرور زیارت کرتا ہے لیکن مناسب رہنمائی نہ ہونے کی وجہ سے وہ اس میدان سے ملحق پہاڑ ، جبل سلع کی جانب نظر اٹھا کر نہیں دیکھتا - اگر وہ نیچے سے ہی پہاڑ کی رفعتوں پر نظر ڈالے تو اسے اس غار کے اثرات ضرور نظر آئین گے -

یہ غار وہ غار ہے جس میں رسول مکرم صلی الله علیہ و الیہ وسلم نے غزوہ خندق کے موقع پر الله سبحان و تعالی کے حضور طویل سجدہ کیا تھا اور مسلمانوں کی کامیابی کے لیے دعا کی تھی - اپکا کا سجدہ اتنا طویل تھا کہ صحابہ کو یہ گمان ہوا کہ شاید آپکی روح اقدس حالت سجدہ میں الله سبحان و تعالی سے جا ملی ہے - بہت متبرک مقام ہے - زائرین مدینہ کو اس کی زیارت بھی کرنی چاہیے -
ALMIGHTY ALLAH KNOWA THE BEST AND ALL
 

NEXT PAGE 
PREVIOUS PAGE
LIST PAGE